ہاتھی کے دانت کھانے کے اور دکھانے کے اور

پاکستانی ریاست عالمی سامراجی قوتوں کی ایک ایسی آلہ کار ریاست ہے جسے سامراجی قوتوں نے اس کے جنم سے لیکر آج تک جب اور جہاں چاہا،ہمیشہ اپنے سامراجی مقاصد کیلئے بھرپور انداز سے استعمال کیا ہے ۔اس ریاست پر براجمان حکمران طبقے نے بھی سامراجی طاقتوں کے سامنے خود کو استعمال ہونے کیلئے ہمیشہ پیش پیش رکھاہے۔27اپریل1978 کو نور محمد ترکئی کی قیادت میں برپا ہونے والے افغان ثور انقلاب کو سبوتاژ کرنے کی غرض سے امریکہ، سعودی عرب اور پاکستان نے ملکر افغانستان میں ڈالر اور ریال جہاد کا آغاز کردیااور مجاہدین کے نام سے بنیاد پرستوں کو نہ صرف تخلیق کیا گیا بلکہ انہیں امریکی حکمرانوں کی طرف سے یہ بتایا گیا کہ یہ خدا کے ماننے والوں اور نہ ماننے والوں کے درمیان ایک مقدس جنگ ہے۔ سرمائے کے پوجاریوں نے سرمایہ دارانہ نظام کو تحفظ فراہم کرنے کیلئے ایک مقدس اتحاد قائم کر لیا جس … Read more

حکمرانوں کے ناٹک اور غریبوں کی سسکیاں

اداریہ  :  انقلابی جدوجہد پاکستان اقتصادی ، سیاسی ، سماجی ، آئینی ،قانونی، اخلاقی، احساسی ، نفسیاتی ، ادبی و داخلی و خارجی پالیسی سازی اور حتٰی کہ شدید ریاستی تُنزلی، ٹوٹ پھوٹ ،خلفشار اور انتشار کا شکار ہے جہاں ملک کے اندر حکمران طبقات کو ہر نوعیت کے بحران سے نبرد آزما ہونے میں مکمل ناکامی کا سامنا ہے وہیں خارجی محاذ پر بھی ناکامی ان کا مُنہ چڑھاتی دکھائی دیتی ہے ۔ ملکی سرحدوں سے لگنے والے تین ممالک ایران، افغانستان اور ہندوستان سے سرحدوں پر شدید ٹکراؤ پایا جاتا ہے اور باقی کی کسر امریکی سامراج کے بدلتے تیور پوری کرتے دکھائی دیتے ہیں ۔ سامراجی ڈراؤن حملوں میں ہزاروں معصوموں کی اموات پر اس ملک کے حکمرانوں نے ہمیشہ ایک مجرمانہ چپ سادھ لی ہے لیکن ملا اختر منصور کے قتل پر یہ اچانک چیخ اٹھے ہیں اور امریکی ڈراؤن حملے کو ملکی سلامتی پر حملے … Read more