فرقہ واریت

تحریر :    انقلابی جدوجہد ضیاء الحق کے مارشل لاء نے سماج میں کئی بربادیاں پھیلائیں۔ قیدیں ٗ کوڑے ٗ پھانسیاں اور جلاوطنیاں تو اس کا معمول تھا۔ سیاست پر پابندیاں لگا کر ایک پورا عمل ہی بند کر دیا گیا۔ جس کے بعد دراصل ریاست کو خوفناک طریقے سے استعمال کیا گیا۔ مارشل لاء کی طوالت کیلئے ریاست کو بہت ہی برے انداز میں استعمال کیاگیا۔ جس سے آج تک نہ صرف پاکستان کے لوگ بلکہ پوری دنیا سے لڑنے کی کوشش کر رہاہے۔ پاکستان بنیادی طور پر ملاؤں کو تمام تر شوروغوغا کے باوجود ایک بہت ہی برداشت والا سماج تھا۔ خصوصی طور پر 1968-69ء کی محنت کشوں کی انقلابی تحریک نے سماج پر بہت گہرے اثرات مرتب کئے تھے۔ سماج میں جہاں فیوڈل سسٹم موجود تھا۔ ذات پات کے گہرے اثرات موجود تھےٗ وہیں پر مذہبی رواداری ٗ آرٹ ٗ کلچر ٗ شاعری ٗ ادب ٗ موسیقی … Read more

ریاسی خلفشار

تحریر :    انقلابی جدوجہد ریاست ہائے اسلامی جمہوریہ پاکستان اس قدرآپاہج ، کمزور ، لاغر ، کرپٹ اور کھوکھلی ہو چکی ہے کہ یہ نہ صرف کوئی بھی چھوٹے سے چھوٹا فیصلہ نافذ کرنے کی اتھارٹی کھو چکی ہے بلکہ اب تو حالت یہ ہے کہ یہ اپنے ہر عمل میں کسی نئے بحران میں داخل ہو جاتی ہے ۔ اس کے اداروں کا آپسی ٹکراؤ شدت اختیار کر جاتا ہے ،اندرونی تضادات کھل کر منظر عام پر آجاتے ہیں ، ریاستی خلفشار اس قدر عیاں ہو جاتا ہے کہ لوگ آمریت میں کسی بڑے طوفان کی پیش گوئیاں شروع کردیتے ہیں اور جمہوری دور میں مارشلاء ان کو ہر ایونٹ پر دکھائی دینے لگتا ہے اور کچھ لوگ ہر معمولی تنازعے پر بھی گھروں اور دفاتر میں بیٹھ کر انقلاب کے پیش منظر پیش کرنا شروع کر دیتے ہیں لیکن یہ بات ضرور ہے کہ ہر طرف ہلچل … Read more

دہشت گردی

تحریر:  انقلابی جدوجہد پاکستان دہشت گردی میں نا صرف خود کیفل ہے بلکہ یہ یہاںاسقدر وافر ہو گئی ہے کہ اس کو برآمد بھی کرتا ہے ۔ اس وقت ملک میں ریاستی دہشت گردی ، انفرادی دہشت گردی ، مذہبی دہشت گردی ، فرقہ وارانہ دہشت گردی ، لسانی دہشت گردی ،علاقائی دہشت گردی اور قومتی بنیادوں پر دہشت گردی سمیت تمام اقسام بدرجہ اتم موجود ہیں۔جو نہ صرف بڑھتی چلی جا رہی ہیں بلکہ ان کی صورتحال اسقدر پیچیدہ بھی ہو گئی ہے کہ اس کو کسی سیدھی لکیر میں سمجھ کر اس کا تجزیہ کرنا اس سے بھی پیچیدہ عمل ہو گیا ہے ۔ گزشتہ چندبرسوں میں اس قدر خون ریزی ہوئی ہے کہ جب بھی انسان اس کو دیکھتا ہے تو ورطہ حیرت میں گم ہو جاتا ہے کہ کیا یہ وہی ملک ہے جو جنرل ضیاءسے قبل تھا اور دوسرا یہ کہ اس کو پیدا کرنے والے … Read more