آزادی کے زخم

تحریر: کامریڈ الطاف بشارت 14اگست 1947کو رات 12:02 منٹ پر پاکستان کا جاگیر دار – سرمایہ دار(جو چوری اور ڈاکہ زنی سے جاگیردار اور سرمایہ دار بنا یا اپنے سامراجی آقاؤں کی دلالی کے انعام کی صورت میں) ، وحشی ملاں، جاہل پنڈت ، قومی و نسلی عصبیت کے جن ، ہندوستان کے بنیاد پرست ہندوبنیے ، وڈیرے، پروہیت ، ساہوکاراور تاجر تو آزاد ہو گئے تھے۔ مگر دونوں اطراف کا عام آدمی، مزدور، کسان ، دیہاڑی دار،ریڑھی بان ، طالب علم، بحیثیت مجموعہ محنت کش طبقہ ، غربت ، نفرت ، جہالت، تعصب ، بربریت، حوانیت و سفاکیت کی بھینٹ چڑھ گیا۔درحقیقت زمین کے گرد باڑ لگانے سے سماج کے طاقتورطبقات تو آزاد ہو جاتے ہیں اور پھر وہ شعوری بدمعاشی کے ذریعے جھوٹ ، فریب دھونس ، ظلم و جبر کا سہارہ لے کر اپنے غلاموں کو آمادہ کرتے ہیں کہ وہ اپنی غلامی کے تصور کو ذہن سے … Read more

جولائی 5 : نظریاتی پسپائی کا سبق

تحریر :    کامریڈ اے اے خان کامریڈ  ٹراٹسکی نے کہا تھا کہ ’’ گاڑی چلانے کا سب سے محفوظ طریقہ یہ ہے کہ سامنے دیکھنے کے ساتھ ساتھ بیک مرر یعنی پیچھے دیکھنے والے شیشے پر نظر مرکوز رہے ‘‘ محض سامنے دیکھنے سے ڈرائیور سامنے سے آنے والے کسی حادثے سے تو گاڑی کو بچا سکتا ہے لیکن گاڑی کوحادثہ کسی پیچھے سے آنے والے کی وجہ سے بھی پیش آ سکتا ہے۔کامریڈ ٹراٹسکی کی اس بات کو مد نظر رکھتے ہوئے آج ہم پاکستانی سیاسی تاریخ کے سیاہ ترین واقع 5 جولائی 1977ء کے مارشل لاء کو زیر بحث لانے اور اس کا درست تجزیہ کرنے کے لیے اس سانحے سے پہلے کے حالات کاجائزہ لینا از حد ضرور ی ہے۔ 60کی دہائی میں ایوبی آمریت کے دس سالہ دور میں سرمایہ دارانہ نظام میں ایک عارضی ابھار کے نتیجے میں پاکستان میں بھی صنعتی و معاشی … Read more

انقلاب ایک ضرورت ایک پکار

تحریر:  کامریڈ اے اے خان مارکسی فلاسفر کارل مارکس نے انقلابات کو تاریخ کا انجن قرار دیا تھا۔اگر ہم مارکس کے اس قول کو سامنے رکھتے آج کے عہد پر غور کریں تو ایک پھر ایک سوال پیدا ہو تا ہے کہ کیا انجن کے بغیر ٹرین سفر جاری رکھ سکتی ہے تو عقل سلیم اس کا جواب نفی میں دیتی نظر آتی ہے ۔پھر کیاانجن کے بغیر ٹرین کو متحرک کیا جاسکتا ہے یا اُس کوحرکت دینے کے لیے بھی انجن کی ضرورت ہوتی ہے؟ جب ان سوالات کا جواب نفی میں ہے تو پھر سماجی تاریخ کا انجن انقلابات ہوتے ہیں اور پھر سماجی ٹرین کو آگے بڑھانے کے لیے انجن کی ضرورت نہیں ہے یقیناًہے ۔ آج کے عہد میں انقلاب ایک ضرورت بن چکاہے۔اس نظام زر کی غلاظتوں سے نجات کی ایک پکار بن چکا ہے۔اس ساری بحث کو آگے بڑھانے سے پہلے ہمیں ضرورت کو … Read more